مقبوضہ کشمیر میں پابندیوں کے باعث بھارت کے کئی حصوں میں بے چینی

حیدر آباد ‘بھارت(این این آئی)بھارت کے معروف سماجی کارکن اور کنوینر آل انڈیا سیکولر فورم ڈاکٹر سریش کھیر نار نے کہا ہے کہ بھارتی حکومت کی طرف سے جموںوکشمیر میں عائد کی جانے والی پابندیوں کے باعث ملک کے کئی حصوں میں بے چینی کی کیفیت پائی جاتی ہے اور عوا م میں ناراضگی ہے ۔

کشمیر میڈیاسروس کے مطابق ڈاکٹر سریش کھیر نار نے بھارتی شہر حیدر آباد سے شائع ہونے والے اردو اخبار ’روزنامہ سیاست ‘‘ کو ایک انٹرویو میں کہا کہ انہوں نے فیصلہ کیا ہے کہ2اکتوبر کو گاندھی کے 150ویں یو م پیدائش پر ملک بھر سے ’’کشمیر چلو‘‘ مارچ کا انعقاد کیا جائے گا تاکہ ہر بھارتی کو اس بات کا اندازہ ہو کہ مرکزی حکومت کی طرف سے کشمیر میں کس طرح کی پابندیاں عائد کی گئی ہیں جبکہ ان پابندیوں کا شکار کشمیریوں کو بھی اس بات کا احساس ہو کہ بھارتیوں کے دلوں میں انکے لیے تڑپ ہے اور وہ بھی انکے کرب کو محسوس کر رہے ہیں۔

ڈاکٹر سریش نار نے کہا کہ آئند ہ ایک ماہ کے دوران بھارت کی مختلف ریاستوں میں رہنے والے سنجیدہ اور کشمیر کے حوالے سے فکر مند افراد سے رابطہ کر کے ’’کشمیر مارچ‘‘ کو کامیاب بنانے کی حکمت عملی تیار کی جائے گی۔ انہوں نے کہا کہ اس مارچ کا مقصد پابندیوں اور ذرائع مواصلات کی بندش کے ساتھ زندگی گزارنے والے کشمیریوں کے ساتھ اظہار یکجہتی کرنا اور کشمیرکے زمینی حالات سے آگہی حاصل کرتے ہوئے وہاں انسانی حقوق کی پامالی کو روکنے کی کوشش کرنا ہے۔

متعلقہ خبریں